Retribution and Reward Are for Actions of the Qalb

Rate this item
(1 Vote)

Accountability is Related to the Actions of the Heart

 

"but He will hold you accountable for what your hearts have earned. " [2:225]

The reward or punishment in the Hereafter depend upon the intentions in the heart when those actions were performed. There's a Hadees also stating that the actions depend upon the intentions. The feelings in the heart, or the sincerity and conviction with which a good act is performed decides the degree of acceptability and reward for that deed.

For instance, if someone gives charity while his heart's desire is to be praised by people for his generosity, such charity is useless even though it may be a huge sum of money. On the other hand, a very small amount given with the right feelings in the heart is much more worthy of reward. In the same way, the accountability of all deeds and worships depends upon the feelings in the heart.

There is no other way to create and increase sincerity and conviction in the heart than Tasawwuf. The Qalb is the first of the Lata-if practiced in our Silsila. The Awaisi Method of Zikr-Allah purifies the Qalb of base moral, and instills sincerity into it. A pure and sincere heart is the requirement for eternal success.

 

جزا اور سزا کا تعلق اعمال قلب سے ہے

اس آیت مبارکہ سے ظاہر ہے کہ آخرت میں جزا اور سزا کا دارومدار ان کیفیات قلبی پر ہے جن کے ساتھ کوئی عمل کیا گیا۔ ایک حدیث مبارک کہ مطابق اعمال کا دارومدار نیتوں پر ہے۔ اس آیت قرآنی سے یہ بھی ظاہر ہے کہ جس درجہ خلوص نیت سے اور اللہ کی رضا کے لئیے کوئی عمل کیا جائے گا، اسی درجہ اس کا ثواب مرتب ہو گا۔

مثال کے طور پر اگر کوئی شخص اس لئیے صدقہ کرے کہ لوگ اس کی مدح کریں اور اسے سخی جانیں، تو ایسا صدقہ بے معانی ہے چاہے لاکھوں روپیہ دیا جائے۔ اس کی نسبت اگر بہت تھوڑی مقدار میں صدقہ دے لیکن دل میں کیفیات ٹھیک ہیں تو یہ عمل زیادہ مقبول ہے۔ اسی طرح تمام عبادات اور اعمال کی جزا و سزا اعمال قلب پر منحصر ہے۔

قلب کی اصلاح کا تزکیہ و تصوف کے علاوہ کوئی راستہ نہیں۔ قلب اویسیہ طریقہ ذکر میں پہلا لطیفہ ہے۔ اس پر ذکر سے تصفیہء قلب اور خلوص نصیب ہوتے ہیں، اور برے اخلاق و اطوار  سے دل پاک ہو جاتا ہے۔ اور ایک پاک صاف دل ہی کامیابی کی ضمانت ہے۔